سیلاب متاثرین کےتئیں ریاستی حکومت غیر سنجیدہ :کانگریس کے ریاستی صدر للو

حکومت کو چاہئے کہ وہ کسانوں کو فوری طور پر معاوضہ دے تاکہ انہیں اس تباہی میں کچھ راحت مل سکے

لکھنؤ / کشی نگر،  ندیوں کے پشتوں کی حفاظت کے تئیں ریاستی حکومت پر لاپراوہی کا الزام لگاتے ہوئے اتر پردیش کانگریس کے صدر اجے کمار للو نے کہا کہ درجنوں گاؤں سیلاب کی زد میں ہیں۔ دھان اور گنے کی فصلیں ڈوب چکی ہیں۔ حکومت کو چاہئے کہ وہ کسانوں کو فوری طور پر معاوضہ دے تاکہ انہیں اس تباہی میں کچھ راحت مل سکے۔
مسٹر للو نے ہفتہ کے روز جاری ایک بیان میں کہا کہ گزشتہ ایک ہفتہ سے وہ سیلاب زدگان سے ملاقات کررہے ہیں۔ بہرائچ سے بلیا تک، صورتحال خوفناک ہے۔ پشتوں کی حالت انتہائی ابتر ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے حکومت کی لاپرواہی واضح طور پر عیاں ہوجاتی ہے۔
مسٹر اجے کمار للو نے کہا کہ سیلاب میں بے پناہ عوامی املاک کا نقصان ہوا ہے۔ حکومت کو فوری طور پر متاثرہ عوام کی مدد کرنی چاہئے۔ گونڈہ، بہرائچ، بارہ بنکی، کشی نگر، گورکھپور، دیوریا، بلیا، مئو، اعظم گڑھ سمیت متعدد اضلاع میں گنے اور دھان کی فصلیں زیرآب آگئی ہيں۔
انہوں نے کہا کہ ریاست کے کسان کئی برسوں سے قدرتی آفات اور ریاست کی کسان مخالف حکومت کی پالیسیوں کا شکار ہو رہے ہیں۔ ان کی جیب میں ایک پیسہ تک نہیں ہے۔ حکومت فوری طور پر سیلاب کو آفت قرار دے۔

Advertisement

Related Articles