آئی پی ایل فرنچائزز کا قرنطین اور جانچ عمل شروع

نئی دہلی : انڈین پریمیر لیگ (آئی پی ایل) کی فرنچائزز نے متحدہ عرب امارات (یو اے ای ) کے لئے روانہ ہونے سے قبل کورونا وائرس (کوویڈ ۔19) کے وبا کے مدنظر اپنی ٹیم کے کھلاڑیوں کی جانچ اور قرنطین کا عمل شروع کر دیا ہے۔
آئی پی ایل کا انعقاد 19 ستمبر سے 10 نومبر تک متحدہ عرب امارات میں ہونا ہے اور ٹیمیں 20 اگست کے بعد ہی متحدہ عرب امارات روانہ ہوسکیں گی۔ممبئی انڈینز نے اپنے کھلاڑیوں کو ایک ہوٹل میں قرنطین کرنا شروع کردیا ہے اور کورونا وائرس کی باقاعدگی سے جانچ بھی کی جارہی ہے۔ قرنطین کی مدت پوری کرنے والے کھلاڑیوں کو نوی ممبئی میں تربیت دینے کی اجازت ہوگی۔
راجستھان رائلز نے اپنے کھلاڑیوں اور کھیلوں کے عملے کو دبئی روانگی سے قبل اگلے دو ہفتوں کے دوران کورونا وائرس کے ٹیسٹ کرانے کا بھی منصوبہ بنایا ہے۔ ایک اور فرنچائز نے احتیاطی تدابیر کے طور پر اپنے ہندوستانی کھلاڑیوں کو گھر میں ہی قرنطین کرنے کو کہا ہے۔
فرنچائز کے ایک ذرائع نے کہا کہ آؤٹ ڈور ٹریننگ ابھی کوئی سوال ہی نہیں ہے ، ہم محتاط ہیں اور اس بار ایس او پی کے ضوابط کے بارے میں ہر چیز غیر یقینی ہے۔ ہم حتمی فیصلے کے منتظر ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنے خدشات آئی پی ایل کی گورننگ کونسل کے سامنے رکھے ہیں امید ہے کہ اس ہفتے کے آخر تک سب کچھ واضح ہوجائے گا تاکہ ہم اپنے آگے کے منصوبوں کو حتمی شکل دے سکیں۔
فی الحال آئی پی ایل نے فیصلہ کیا ہے کہ متحدہ عرب امارات میں تربیت شروع کرنے سے قبل کھلاڑیوں اور معاون عملے کو کورونا وائرس سے چار بار جانچ کے ساتھ ساتھ انہیں ایک ہفتے تک مکمل طور پر قرنطین میں رکھا جائے۔
ابھی تک آئی پی ایل کے شیڈول کا اعلان نہیں کیا گیا ہے لیکن سن رائزرس حیدرآباد کے کھلاڑی ڈیوڈ وارنر اور جانی بیئرسٹو کو سات روزہ لازمی قرنطین پر عمل کرنا پڑا تو وہ ٹورنامنٹ کے پہلے دو میچ نہیں کھیل سکیں گے۔ رائل چیلنجرز کے کھلاڑی آرون فنچ اور معین علی کو بھی اس طرح کے مسائل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔
توقع کی جارہی ہے کہ یہ چاروں کھلاڑی انگلینڈ اور آسٹریلیا کے مابین ٹی ٹوئنٹی سیریز 15 ستمبر کو آئی پی ایل شروع ہونے سے چار دن قبل ختم ہونے کے بعد براہ راست متحدہ عرب امارات پہنچیں گے۔
ادھر آئی پی ایل نے بھی اشتہارات کی شوٹنگ اور کھلاڑیوں کی پروموشنل سرگرمیوں سے متعلق سخت قوانین جاری کردیئے ہیں۔ اشتہاری شوٹ اور متحدہ عرب امارات روانگی کے مابین 10 دن کا فاصلہ رکھنا کھلاڑیوں کے لئے ضروری ہے۔ اس کے علاوہ سماجی دوری برقرار رکھتے ہوئے صرف پانچ ستارہ ہوٹل کے بال روم میں ہی اشتہار کی شوٹنگ کی جاسکتی ہے۔
چنئی سپر کنگز اگست کے دوسرے ہفتے متحدہ عرب امارات پہنچنے کے خواہاں ہیں لیکن اس منصوبے کو حتمی فہرست کے بغیر ملتوی کرنا پڑسکتا ہے۔ چنئی سپر کنگز نے اپنی ٹیم کے ہندوستانی کھلاڑیوں کو آگاہ کیا ہے کہ وہ قوانین کی حتمی فہرست آنے کے بعد چنئی پہنچنا شروع کردیں۔
کولکتہ نائٹ رائیڈرز 21 یا 22 اگست تک ابوظبی پہنچنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ کنگز الیون پنجاب متحدہ عرب امارات روانگی سے قبل اپنی ٹیم کے ہندوستانی کھلاڑیوں کو ساتھ لانے کی کوشش کر رہا ہے۔

Advertisement

Related Articles