مرکز کے اگنی پتھ اسکیم کے خلاف بنگال میں بھی مختلف مقامات پر احتجاج

کلکتہ ،جون۔فوج میں بھرتی کیلئے مرکزی حکومت کی ”اگنی پتھ“ اسکیم کے اخلاف احتجاج اب بنگال تک پہنچ گیا ہے۔جمعہ کی صبح سے ہی کئی مقامات پر جلوس اور احتجاجی مظاہرہ کئے جارہے ہیں۔ اس سلسلے میں تمام ضلع انتظامیہ کو وارننگ دے دی گئی ہے۔ حکومت نے کہا ہے کہ کسی بھی طرح سے افراتفری نہیں ہونی چاہیے۔ پورے ضلع کی مسلسل نگرانی کی جا رہی ہے۔ ہوڑہ اور پرولیا میں کئی مقامات پر جلوس یا اجتجاج کے انعقاد کی کوششوں کو ریاستی پولیس نے روک دیا ہے۔مرکز کے اگنی پتھ اسکیم کے خلاف احتجاج کی وجہ سے بنگال آنے اور جانے والی کئی ٹرینیں متاثر ہوئی ہوئی ہیں بہار میں ریل کی ناکہ بندی، اسٹیشن پر توڑ پھوڑ اور آتش زنی کی وجہ سے ٹرینوں کی آمدورفت میں خلل پڑا۔ ریلوے کے مطابق یہ مسئلہ مشرق میں ریلوے ٹریکس اور اسٹیشنوں پر احتجاج کی وجہ سے پیدا ہوا ہے۔اتنا ہی نہیں بہار کے ساسارام اور بھاویہ اسٹیشنوں کے درمیان ممبئی میل پر مبینہ طور پر حملہ کیا گیا۔ الزام ہے کہ ٹرین پر پتھروں، لاٹھیوں اور بندوقوں سے حملہ کیا گیا۔ اپنی جان کے خوف سے مسافر سیٹوں کے نیچے چھپ گئے۔ہوڑہ-نئی دہلی پوربا ایکسپریس، ہا۔وڑہ-للکوا ایکسپریس، ہوڑہ-دھنباد بلیک ڈائمنڈ ایکسپریس، رانچی-پٹنہ پاٹلی پترا ایکسپریس، داناپور-ٹاٹا ایکسپریس، آسنسول-ٹاٹا ایکسپریس، جوائے ایکسپریس، ٹرینیں تاخیر سے چل رہی ہیں۔دوسری جانب مرکزی حکومت نے ملک کے مختلف حصوں میں شدید احتجاج کے درمیان فوج کے فائر فائٹنگ پروجیکٹ میں شامل ہونے کے لیے عمر کی حد بڑھا دی ہے۔ مرکز نے جمعرات کو کہا کہ اگنی پتھ پروجیکٹ کے ذریعے بھرتی کے لیے عمر کی حد 21 سے بڑھا کر 23 سال کر دی گئی ہے۔

Advertisement

 

Advertisement

Related Articles