محکمہ ایکسائز کو مئی 2022 میں 188 کروڑ کی ریکارڈ آمدنی ہوئی : ونے چوبے

رانچی، جون۔جھارکھنڈ میں ایکسائز ڈپارٹمنٹ کی نئی شراب پالیسی کی وجہ سے مئی 2022 میں محصولات کی وصولی میں 70 فیصد اضافہ درج کیا گیا ہے جو کہ ایک ریکارڈ ہے۔ نئی پالیسی کے نفاذ سے پہلے اپریل 2022 میں 109 کروڑ روپے کی آمدنی ہوئی تھی، جبکہ مئی 2022 میں 188 کروڑ روپے کی آمدنی ہوئی ہے۔ ایک طرف آمدنی میں اضافہ ہوا ہے تو دوسری طرف پالیسی میں چار نکات پر ہوئے تبدیلی کی وجہ سے نظام میں بھی بنیادی تبدیلی آئی ہے۔ یہ باتیں محکمہ آبکاری اور امتناع کے سکریٹری ونے کمار چوبے نے آج محکمہ آبکاری کے کوٹیلیہ آڈیٹوریم میں صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہیں۔مسٹر چوبے نے بتایا کہ ریاست میں شراب کی نئی پالیسی کے بارے میں 31 مارچ کو ایک قرارداد جاری کی گئی تھی اور ایک ماہ میں نئی پالیسی تیار کرکے یکم مئی 2022 سے ریاست میں نئی شراب پالیسی نافذ کر دی گئی تھی۔ ایک ماہ میں حکومت کو ایکسائز ریونیو کی مد میں 188 کروڑ روپے ملے ہیں جو آج تک کا ریکارڈ ہے۔ انہوں نے کہا کہ نئی ایکسائز پالیسی ریونیو گروتھ کے مطابق بنائی گئی ہے جس میں تین نکات یعنی تھوک فروش، ریٹیلر اور بار آپریشن کے حوالے سے نئی پالیسیاں بنائی گئی ہیں جبکہ ملکی شراب کی پالیسی میں ترمیم کی گئی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ مین پاور، سیکیورٹی گارڈ، آڈٹ، ٹرانسپورٹ وغیرہ کے لیے مختلف ایجنسیوں کا انتخاب آن لائن ٹنڈر کے توسط سے شفافیت کے ساتھ کیا گیاہے ۔ پالیسی میں چیک اینڈ بیلینس کے مابین توازن برقرار رکھا گیا ہے ۔مسٹر چوبے نے کہا کہ پچھلی بار سیلز پر ریونیو کا پروویژن تھا، وہیں اس پالیسی میںاٹھاؤ پر ریونیو کا پرویژن کیا گیا ہے ساتھ ہی جہاں شراب کی تیاری ہورہی ہے ، ہم نئی پالیسی کے مطابق وہیں آن لائن ہولوگرام دے کر کوڈ فراہم کر رہے ہیں۔معلومات دیتے ہوئے، ایکسائز سیکرٹری نے کہا کہ جب اگست 2017 میں نئی مصنوعات کی پالیسی نافذ کی گئی تھی، تو اس کے نفاذ کے مہینے میں صرف 23 کروڑ کی آمدنی ہوئی تھی، جب کہ یکم مئی 2022 کو نافذ ہونے والی پالیسی کے بعد 188 کروڑ کی آمدنی ہوئی ہے جو اس پالیسی کی کامیابی کی کہانی کا دستاویز ہے ۔انہوں نے کہا کہ مئی مہینے میں کنٹری لیکر کا مسئلہ آیا تھا لیکن اگلے دس دن میں اس مسئلے سے نجات مل جائے گی ۔پلاننگ پالیسی کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ ضلعی سطح پر ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو ایک مسلسل عمل کے بعد اہلیت پر پورا اترنے والوں کو تعینات کرے گی۔ایکسائز کمشنر امیت کمار نے بتایا کہ اس وقت کل 1434 دکانیں فعال ہیں اور پچھلے ایک ماہ میں 49 دکانوں میں پائلٹ پروجیکٹ کے طور پر ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم چل رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ یکم جون سے پانچ اضلاع رانچی، جمشید پور، دھنباد، سرائے کیلا اور بوکارو میں ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم بھی شروع کیا جا رہا ہے۔ مذکورہ نظام کے نفاذ سے لیکیج کا امکان تقریباً ختم ہو جائے گا۔

Advertisement

 

Advertisement

Related Articles