اکالیوں کا وزیراعلی کی رہائش گاہ کا محاصرہ کرنے کی کوشش،سکھبیر بادل حراست میں

چنڈی گڑھ، نومبر۔پیٹرول- ڈیزل کی قیمتیں کم کرنے اور گلابی سنڈی کی وجہ سے خراب ہوئی کپاس فصل کے مصنوعات کو معاوضہ دینے کے مطالبے کے سلسلے میں پنجاب میں اپوزیشن شرومنی اکالی دل نے آج یہاں وزیراعلی چرنجیت سنگھ چنی کی رہائش گاہ کا محاصرہ کرنے کی کوشش کی۔شرومنی اکالی دل کے صدر سکھبیر سنگھ بادل کی قیادت میں بڑی تعداد میں پارٹی کارکنان وزیراعلی کی رہائش گاہ کی طرف بڑھے۔پولیس نے وزیراعلی کی رہائش گاہ کے نزدیک پولیس نے بیری کیڈ لگاکر مظاہرین کو آگے بڑھنے سے روکنے کےلئے پختہ بندوبست کررکھے تھے۔ پہلے تو اکالیوں نے ان بیری کیڈس کے نزدیک دھنا دیا اور بعد میں انہیں توڑ کر آگے بڑھنے کی کوشش کی۔اس پر پولیس کو مظاہرین کو کھدیڑنے اور حالات کو کنٹرول کرنے کےلئے لاٹھی چارج کرنا پڑا جس میں متعدد کارکنان زخمی ہوگئے۔ پولیس نے مسٹر بادل اور متعدد پارٹی کارکنان کو حراست میں لے لیا اور بس میں بھر کر لے گئی۔سکھبیر سنگھ بادل نے بعد میں ٹویٹ کیا’’ آج اکالی کارکنان نے وزیراعلی چنی پر سیاست سرجیکل اسٹرائک کی ہے۔ رکن اسمبلی فلیٹوں کا محاصرہ اور وزیراعلی کی رہائش گاہ کے نزدیک واقع بیری کیڈ کے باوجود اکالی کارکنان انہیں بھیدنے میں کامیاب رہے۔اکالی کارکنان نے وزیراعلی کو صاف پیغام دے دیا ہے کہ وہ تصویر کھنچوانا بند کریں اور وعدے پورے کرنے پر توجہ دیں۔‘‘انہوں نے اگلے ٹویٹ میں لکھا،’’موجودہ کانگریس حکومت بدعنوان ہے اور اس کا وزیراعلی صرف لوٹ میں دلچسپی رکھتا ہے۔ریاستی حکومت نے اکالی کارکنان پر لاٹھیاں برسائیں جو پر امن طریقے سے کسانوں اور ریاست کے عوام کی آواز اٹھارہے تھے۔ہمارا مطالبہ ہے کہ کپاس مصنوعات کو 50000 روپے فی ایکڑ کا معاوضہ اور پیٹرول ڈیزل پر دس دس روپے فی لیٹر کی ویٹ میں کٹوتی کی جائے اور جب تک یہ ہو نہیں جاتا ہم چین سے نہیں بیٹھیں گے۔‘‘مسٹر بادل نے کہا ’’ گلابی سنڈی کی وجہ سے کپاس کی فصل برباد ہوگئی ہے لیکن اس کے مصنوعات کو ابھی تک معاوضہ نہیں ملا ہے۔وزیراعلی چرنجیت سنگھ چنی بار بار دہلی جانے کے بجائے پنجاب پر دھیان دیں۔‘‘بادل نے دھرنے کے دوران کہا کہ پنجاب حکومت کو پیٹرول اور ڈیزل پر فوراً دس دس روپے فی لیٹر کی کٹوتی کر کے عوام کو راحت دینی چاہئے۔ وزیراعلی کہتے ہیں کہ حکومت کا خزانہ بھرا ہے تو اسے یہ فیصلہ آج ہی لینا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کے علاوہ پڑوسی ریاست ہریانہ ،ہماچل پردیش،راجستھان ،مرکز کے زیر انتظام علاقے چنڈی گڑھ نے اپنے یہاں پیٹرول ڈیزل کی قیمتوں میں پہلے کی قیمتیں کم کردی ہیں جس سے پنجاب میں پیٹرول ڈیزل کی قیمتیں ویٹ زیادہ ہونے کی وجہ سے اب بہت ہی زیادہ ہیں۔ لیکن ریاستی حکومت انہیں کم کرنے کا فیصلہ کرنے میں تاخیر کررہی ہے۔ریاست کے سرحدی علاقوں کے لوگ سستا پیٹرول ڈیزل لینے کےلئے پڑوسی ریاستوں اور چنڈی گڑھ کی طرف رخ کررہے ہیں۔ پنجاب کے مقابلے چنڈی گڑھ میں پیٹرول 11.64 روپے لیٹر سستا ہے۔ہماچل میں 11.57 روپے اور ہریانہ میں 10.60 روپے سستا ہے۔یہی حالات ڈیزل کی قیمتوں کے بھی ہیں۔ اس سے ریاست کے سرکاری خزانے کو ٹیکس کے طورپر بھاری نقصان ہورہا ہے۔

Advertisement
Advertisement

Related Articles