واپس نہیں ہوگی اگنی پتھ یوجنا،مظاہرین کےلئے افواج میں جگہ نہیں:فوج

نئی دہلی،جون ۔تینوں افواج کی جانب سے آج یہ واضح کیا گیا ہے کہ اگنی پتھ یوجنا کا مقصد افواج کو نوجوان اور زیادہ طاقت ور بنانا ہے اور اس یوجنا کو واپس نہیں لیا جائےگا اور اس کے خلاف پرتشدد مظاہرہ کرنے والے نوجوانوں کو افواج میں بھرتی نہیں کیا جائےگا۔اگنی پتھ یوجنا کے خلاف ملک بھر میں ہورہے مشتعل اور پرتشدد مظاہروں کے پیش نظر وزیردفاع راج ناتھ سنگھ کی رہائش گاہ پر تینوں افواج کے سربراہوں کی موجودگی میں اتوار کو ہوئی اہم میٹنگ کے بعد فوجی امور کے محکمے میں اڈیشنل سکریٹری لیفٹننٹ جنرل انل پوری اور تینوں افواج کے سینئر افسروں نے ایک پریس کانفرنس میں یہ معلومات دی۔لیفٹننٹ جنرل پور نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ اگنی پتھ یوجنا غیر ملکوں میں جاری مختلف ماڈلوں کا مطالعہ کرنے کے بعد لائی گئی ہے اور ہندوستان میں اس طرح کی یوجنا کے بارے میں سب سے پہلے سال 1989 میں بات چیت شروع ہوئی تھی۔انہوں نے کہا کہ اس کے بعد سے اس طرح کی یوجنا شروع کرنے کی مسلسل کوشش کی جارہی ہے لیکن اس میں اب جا کر کامیابی ملی ہے۔انہوں نے کہا کہ کورونا کی وبا کے پیش نظر پچھلے دو سالوں سے جوانوں کی بھرتی نہیں کی جاسکی تھی اور اسے اتفاق کہیں یا کچھ اور لیکن اس دوران دو سال تک اس یوجنا پر خوب ماتھاپچی کی گئی اور اس کے بعد اگنی پتھ یوجنا شروع کی گئی۔اس کا بنیادی مقصد افواج کو نوجوان اور زیادہ طاقت ور اور تکنیک اور ٹیکنولوجی سے لیس بنانا ہے۔ملک کا دفاع مضبوط کرنے کےلئے یہ اقدام کرنا بہت ضروری ہے۔انہوں نے کہا کہ سال 1989 میں فوج کی اوسط عمر 30 تھی جو بڑھکر 32 سال ہوگئی ہے۔نئی یوجنا نافذ ہونے کے کچھ سالوں بعد یہ اوسط عمر 24 سے 26 سال تک ہوجائے گی۔انہوں نے کہا کہ ملک کے دفاع اور سکیورٹی کو دھیان میں رکھتے ہوئے اگنی پتھ یوجنا کو واپس نہیں لیا جائےگا۔تینوں افواج چاہتی ہیں کہ یہ یوجنا واپس نہ ہو اوراس کے مقصد پورے ہونے چاہئے۔ایک دیگر سوال کے جواب میں لیفٹننٹ جنرل پوری نے کہاکہ اگنی پتھ یوجنا کے تھت بھرتی ہونے والے اگنی ویروں کو درخواست جمع کرنے کے ساتھ ایک حلف دے کر یہ حلف لینا ہوگا کہ وہ کسی بھی پرتشدد تحریکوں میں شامل نہیں رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ سبھی اگنی ویروں کی پولیس انکوائری کرائی جائےگی اور جگہ جگہ لگے کیمروں سے بھی اس بات کی تصدیق کی جائےگی کہ اس امیدوار نے کسی بھی طرح کی تحریک یا مظاہرے میں حصہ نہیں لیا ہے۔انہوں نے ملک کے نوجوانوں سے درخواست کی کہ وہ اپنا وقت برباد نہ کریں اور اگنی ویروں کےلئے ہونے والی بھرتی عمل کی تیاری کریں۔

Advertisement

Related Articles