کامیاب شادی کے لیے صرف محبت کافی نہیں ہوتی، اجے دیوگن

ممبئی،اپریل۔بولی وڈ کے ایکشن ہیرو اجے دیوگن نے کہا ہے کہ شادی کو کامیاب بنانے کے لیے صرف ’محبت‘ کافی نہیں ہوتی اور یہ کہ ان کی شادی شدہ زندگی میں بھی اتار چڑھاؤ آتا رہا ہے۔اجے دیوگن اور اداکارہ کاجول نے 24 فروری 1999 کو شادی کی تھی اور ان کے دو بچے بھی ہیں۔جوڑے کی بڑی بیٹی نیسا کی عمر 19 برس ہے، ان کی پیدائش 2003 میں ہوئی تھی جب کہ ان کا ایک بیٹا یگ بھی ہے۔دونوں نے کیریئر کے عروج پر شادی کی تھی اور شادی سے قبل دونوں کے درمیان تعلقات بھی رہے تھے۔اجے دیوگن اور کاجول کی شادی کو 23 برس گزر چکے ہیں اور ان کی جوڑی کو بولی وڈ کی کامیاب اور مقبول ترین جوڑیوں میں شمار کیا جاتا ہے۔حال ہی میں اجے دیوگن نے کامیاب شادی کے راز کے حوالے سے ایک انٹرویو میں بتایا کہ شادی کو کامیاب بنانے کے لیے صرف محبت کافی نہیں ہوتی۔’انڈین ایکسپریس‘ کے مطابق اجے دیوگن نے ایک یوٹیوبر کو دیے گئے انٹرویو میں اعتراف کیا کہ مرد اور خاتون کا ذہن الگ ہوتے ہیں، دونوں کی سوچ بھی مختلف ہوتی اور دوسرے شادی شدہ جوڑوں کی طرح ان کی ازدواجی زندگی میں بھی اتار چڑھاؤ رہا۔انہوں نے اعتراف کیا کہ ان کے اور کاجول کے درمیان بھی اختلافات پیدا ہوتے رہے مگر دونوں نے ایک دوسرے سے بات چیت کرکے اور افہام و تفہیم سے معاملات کو آگے بڑھایا۔اداکار کا کہنا تھا کہ لوگوں کی سوچ غلط ہے کہ شادی کے لیے محبت ہی سب کچھ ہوتی ہے جب کہ حقیقت یہ ہے کہ کامیاب شادی کے لیے صرف محبت کافی نہیں ہوتی۔اجے دیوگن کا کہنا تھا کہ جیسے جیسے انسان کی عمر بڑھتی ہے، ویسے ویسے دیگر عوامل بھی اس کے رشتے اور سوچ پر حاوی ہوجاتے ہیں لیکن ایسے میں انسان کو معاملات کو سمجھداری سے آگے لے کر جانے ہوتے ہیں۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ ان کی جوڑی دکھاوے کی محبت پر یقین نہیں رکھتی اور ان کے لیے ذاتی طور پر جسمانی پیار بھی اتنی زیادہ اہمیت نہیں رکھتا، وہ فطری طور پر دوسروں کا خیال رکھنے والے شخص ہیں اور یہی بات ان کی کامیاب شادی کا سبب ہے۔

Advertisement

Related Articles