روس کا یوکرین پر حملہ ناقابل قبول ہے، انجیلا مرکل

برلن،جون ۔ جرمنی کی سابق چانسلر انجیلا مرکل نے یوکرین پر روسی جارحیت کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ روسی حملہ ناقابل قبول اور بہت بڑی غلطی ہے۔ عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق جرمنی کی سابق حکمراں انجیلا مرکل نے عہدہ چھوڑنے کے بعد اپنے پہلے انٹرویو میں یوکرین پر روس کے حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے تاہم انھوں نے اپنے دور میں روس سے متعلق پالیسیوں پر معذرت کرنے سے انکار کیا۔انجیلا مرکل سے جب 2008کے دوران یوکرین اور جارجیا کی نیٹو میں شمولیت کی مخالفت کرنے کے فیصلے سے متعلق سوال کیا گیا تھا تو جرمنی کی سابق حکمراں نے اس پالیسی کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ اگر ان ممالک کی نیٹو میں شمولیت کی منظوری دیدی جاتی تو ان ممالک کو روسی صدر بہت زیادہ نقصان پہنچا سکتے تھے۔جرمنی کی سابق حکمراں نے مزید کہا کہ اس پالیسی کا ایک مقصد ان ممالک کو روسی جارحیت کا مقابلہ کرنے کی تیاری کا موقع بھی دینا تھا اگر اْس وقت یوکرین کو نیٹو میں شامل کرنے کی منظوری دے دی جاتی تو روسی حملے کو یوکرین برداشت نہیں کرپاتا جیسا کہ اب کر رہا ہے۔ واضح رہے کہ یوکرین کے صدر وولودویمر زیلنسکی نے یورپی یونین کے اجلاس سے ورچوئل خطاب میں شکوہ کیا تھا کہ جرمنی نے نیٹو میں شمولیت کی منظوری نہ دیکر زیادتی کی تھی جس کا خمیازہ اب یوکرینی عوام کو بھگتنا پڑ رہا ہے۔

Advertisement

 

Advertisement

Related Articles