دہلی حکومت کا گرین پارک ملٹی لیول کار پارکنگ کے گرنے کی تحقیقات کا حکم

نئی دہلی، نومبر۔ کیجریوال حکومت نے گرین پارک ملٹی لیول کار پارکنگ گرنے کے واقعہ کی تحقیقات کا حکم دیا ہے اور ڈائریکٹر آف لوکل باڈیز کو 15 دنوں کے اندر اپنی رپورٹ پیش کرنے کو کہا ہے۔نائب وزیراعلیٰ منیش سسودیا ہفتے کے روز یہی اطلاع دیتے ہوئے کہا،’کیجریوال حکومت عوام کے ٹیکس کے پیسوں کی بربادی اور ان کی حفاظت میں کسی بھی طرح کی کوئی کوتاہی نہیں برتے گی۔ اس معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے حکومت نے ڈائریکٹر آف لوکل باڈیز کو حکم دیا ہے کہ وہ پی ڈبلیو ڈی سے اس کی تحقیقات کرائی جائے اور 15 دن کے اندر رپورٹ پیش کریں تاکہ پارکنگ تعمیر کی خامیاں معلوم کرکے قصورواروں کے خلاف کاروائی کی جا سکے۔ انہوں نے بتایاکہ کہ ایم سی ڈی کی جانب سے آس پاس کے دکان داروں سے پارکنگ کنورژن چارجز کے نام پر موٹا پیسہ وصولا گیا ۔ تاجروں کی دکانیں سیل کی گئیں اور پارکنگ کی تعمیر کی گئی لیکن ایک سال کے اندر پارکنگ بی جے پی کے زیر انتظام کارپوریشن کی بدعنوانی کے بھینٹ چڑھ گئی اور ڈھہنے لگی ہے۔ اس سے کافی کاروں کو نقصان ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی دہلی میں کارپوریشن کا راج چلا رہی ہے اور ہمیشہ پیسے کی کمی کا رونا روتی ہے لیکن جب پیسہ ہاتھ میں آتا ہے تو وہ عوام کے ٹیکس کے پیسے میں بدعنوانی اور بے ایمانی کرتی ہے۔ گرین پارک کی ملٹی لیول پارکنگ اس کرپشن کے بھینٹ چڑھ گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ سال نومبر میں اس پارکنگ کا افتتاح بی جے پی لیڈروں نے بڑے جوش و خروش سے کیا تھا لیکن ایک سال کے اندر ہی یہ پارکنگ ٹوٹ گئی۔ پارکنگ کے اندر الیکٹرک فرش پلیٹیں گرنے لگیں۔ جس کی وجہ سے کئی گاڑیوں کو نقصان پہنچا اور لوگوں کو بھاری نقصان اٹھانا پڑا۔ بھگوان کا شکر ہے کہ کسی کی جان کو کچھ نہیں ہوا۔مسٹر سسودیا نے کہا کہ پارکنگ بننے کے دوران کارپوریشن کی جانب سے آس پاس کے دکان داروں سے پارکنگ کنورژن چارجز کے نام پرموٹا پیسہ وصولا گیا۔ تاجروں کی دکانیں سیل کی گئیں اور پارکنگ بنا دی گئی۔ لیکن نتیجہ سب کے سامنے ہے۔ یہ پارکنگ کرپشن اور گھپلوں کی وجہ سے گرنے لگی ہے۔ اخبارات کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ اس پارکنگ کو شروع کرنے سے پہلے اس کا سیفٹی آڈٹ بھی نہیں کیا گیا تھا۔نائب وزیر اعلیٰ نے کہا کہ کیجریوال حکومت عوام کے ٹیکس کے پیسے کو ضائع نہیں کرے گی اور ان کی حفاظت میں کوئی کوتاہی نہیں برتے گی۔ انہوں نے کہا کہ ایم سی ڈی میں بی جے پی کے لیے گنے چنے دن باقی ہیں۔

Advertisement

Related Articles