نئی ایجوکیشن پالیسی حکومت کی نہیں ملک کی پالیسی ہے : وزیراعظم مودی

نئی دہلی،وزیراعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ نئی ایجوکیشن پالیسی حکومت کی پالیسی نہیں ہے بلکہ وہ ملک کی ایجوکیشن پالیسی ہے اور اس سے سماج کے سبھی لوگوں کے آپسی مشورے سے نافذ کیا جائےگا۔
مسٹر مودی نے پیر کو یہاں نئی ایجوکیشن پالیسی پر گورنروں کے کانفرنس کا افتتاح کرتے ہوئے اس رائے کا اظہار کیا۔انہوں نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جس طرح پالیسی یا دفاعی پالیسی کسی حکومت کی نہیں ہوتی بلکہ وہ ملک کی ہوتی ہے اسی طرح یہ نئی ایجوکیشن پالیسی بھی حکومت کی نہیں ،بلکہ یہ ملک کی ایجوکیشن پالیسی ہے۔
انہوں نے کہا کہ حکومت تو آتی جاتی رہتی ہیں لیکن غیر ملکی پالیسی اور دفاعی پالیسی ملک کی پالیسی بنی رہتی ہیں ۔نئی ایجوکیشن پالسیی ملک کی امیدوں کوپورا کرنے کےلئے بنائی گئی ہے ۔اسے تیزی سے بدلتے وقت میں اور مستقبل کو توجہ میں رکھتے ہوئے اسے تیار کیا گیا ہے اس لئے اس ایجوکیشن پالیس کو نافذ کرتے وقت ہمیں یہ دیکھنا ہوگا کہ ملک کی پالیسی کے طورپر نافذ ہورہی ہے یا نہیں۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ اس ایجوکیشن پالیسی پر ملک بھر میں صلاح و مشورہ جاری ہے اور ہم سب کو مل کر اس کے بارے میں خدشوں اور شبشہات کو دور کرنا ہے اور اسے نافذ کرنا ہے۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ آج اطلاع اور علم سبھی کو مہیا کرایا جارہا ہے اور ٹیکنولوجی کا بھی فائدہ غریبوں اور گاؤں کے لوگوں تک پہنچ رہا ہے۔ اس ایجوکیشن پالیسی میں ان سبھی باتوں کو توجہ میں رکھا گیا ہے اور لچیلے پن کی بات بھی رکھی گئی ہے۔

 

Advertisement

Related Articles