سات سو وکٹ تک پہنچ سکتا ہوں: اینڈرسن

ساؤتیمپٹن ، 26 اگست (یو این آئی)ٹیسٹ کرکٹ میں 600 وکٹیں حاصل کرنے والے انگلینڈ کے پہلے فاسٹ بالر جیمز اینڈرسن نے امید ظاہر کی ہے کہ وہ ایلیٹ 700 وکٹ کے کلب میں شامل ہوسکتے ہیں  38 سالہ اینڈرسن سے یہ قیاس لگائے جارہے تھے کہ وہ اس موسم گرما میں ، 600 وکٹیں لینے کے بعد کرکٹ سے سبکدوش ہوجائیں گے لیکن ان کا کہنا ہے کہ ان کا ایسا کوئی ارادہ نہیں ہے اور وہ اس وقت ریٹائرمنٹ کے بارے میں نہیں سوچ رہے ہیں۔

منگل کے روز پاکستان کے خلاف تیسرا اور آخری ٹیسٹ میچ ڈرا ہونے کے بعد اینڈرسن نے کہا کہ ان کے پاس ابھی بہت زیادہ کرکٹ باقی ہے اور وہ مستقبل میں 700 وکٹیں حاصل کرسکتے ہیں۔

دنیا کے بہترین تیز بولرز میں سے ایک اینڈرسن نے ساوتھمپٹن ​​ٹیسٹ میچ کے آخری دن اپنے کپتان جو روٹ کے ہاتھوں سلپ میں پاکستان کے کپتان اظہر علی کو کیچ کراکر اپنی 600 ویں وکٹ حاصل کی ۔ اینڈرسن نے اپنے 156 ویں میچ میں یہ کارنامہ انجام دیا۔

اینڈرسن یہ کارنامہ سر انجام دینے والے دنیا کے پہلے فاسٹ بالر اور مجموعی طور پر چوتھے بولر بن گئے ہیں۔ اینڈرسن سے قبل یہ کارنامہ ہندوستان کے انل کمبلے (619) ، آسٹریلیا کے شین وارن (708) اور سری لنکا کے متھیا مرلی دھرن (800) نے حاصل کیا تھا۔

اینڈرسن نے کہا کہ میں نے اس بارے میں کیپٹن جو (روٹ) سے بات کی ہے اور انہوں نے کہا ہے کہ وہ مجھے آسٹریلیا کے خلاف اگلے سال کی ایشز سیریز میں دیکھنا چاہیں گے۔ مجھے ٹیم میں شامل نہ ہونے کی ایسی کوئی وجہ نظر نہیں آرہی ہے۔ میں ہمیشہ کی طرح اپنی فٹنس پر فوکس کر رہا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ میں اس موسم گرما میں جس طرح سے کرنا چاہتا تھا ایسی بولنگ نہیں کرسکا تھا۔ لیکن اس ٹیسٹ میں میں نے محسوس کیا کہ میں اب بھی اس ٹیم میں حصہ ڈال سکتا ہوں۔ جب تک میں اس طرح محسوس کرتا ہوں ، میں کھیل جاری رکھنا چاہتا ہوں۔ مجھے نہیں لگتا کہ میں نے ابھی انگلینڈ کے ایک کرکٹر کی حیثیت سے اپنا آخری ٹیسٹ میچ جیت لیا ہے۔ کیا میں 700 وکٹ حاصل کرسکتا ہوں؟ کیوں نہیں؟

اینڈرسن اگلے سال ایشز کے دوران 39 سال کے ہوجائیں گے۔ اس طرح کی عمر میں فاسٹ بولر کے لئے اپنی فارم برقرار رکھنا بہت مشکل ہوتا ہے۔ انہوں نے تیسرے ٹیسٹ میچ میں 29 ویں بار اننگز میں پانچ یا اس سے زیادہ وکٹیں لیں۔ فاسٹ بالرز میں اس معاملے میں صرف رچرڈ ہیڈلی ان سے آگے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ان کی وکٹوں کی بھوک ابھی کم نہیں ہوئی ہے اور اسی وجہ سے اب بھی کھیل رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹیسٹ چمپیئن شپ ابھی جاری ہے۔ ابھی ہمیں ٹیسٹ سیریز میں کھیلنا ہے اور ٹیسٹ میچ جیتنا ہے۔ مجھے ان سب میں دلچسپی ہے۔

اینڈرسن نے مئی 2003 میں زمبابوے کے خلاف لارڈز گراؤنڈ میں ٹیسٹ کیریئر کا آغاز کیا تھا اور 17 سال بعد وہ 600 وکٹ کے عروج پر پہنچ گئے۔ اینڈرسن نے ان 600 وکٹوں میں 89 ہوم ٹیسٹ میں 384 وکٹیں 61 غیر ملکی ٹیسٹ میں 194 وکٹ اور غیر جانبدار مقامات پر چھ ٹیسٹ میں 22 وکٹیں حاصل کیں۔

اینڈرسن نے اپنے کیریئر میں 11 بار آسٹریلیا کے پیٹر سڈل کو بولڈ کیا جبکہ انہوں نے ہندوستان کے سچن تندولکر ، مائیکل کلارک اور آسٹریلیا کے ڈیوڈ وارنر اور پاکستان کے اظہر علی کو نو بار آؤٹ کیا۔

 

Advertisement

Related Articles