آزاد کے استعفیٰ پر اویسی کا طنز،’45 سال کی غلامی صرف اس لیے؟

نئی دہلی،کانگریس مجلس عاملہ (سی وی سی) کی میٹنگ میں پیر کو پارٹی کے رہنماؤں کی اندرونی خلفشار کی رپورٹس اور راجیہ سبھا میں اپوزیشن کے رہنما غلام نبی آزاد کے استعفیٰ سونپنے کی بات پر آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کے سربراہ اسد الدین اویسی نے مسٹر آزاد پر طنز کرتے ہوئے کہا،’45 سال کی غلامی صرف اس لیے؟‘

محترمہ گاندھی کی صدارت میں آج منعقد سی وی سی کی ورچول میٹنگ میں آئی رپورٹس میں کچھ سینیئر رہنماؤں پر راہل گاندھی کے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) سے ساز باز کے الزام پر مسٹر آزاد بہت ناراض ہو گئے۔ ان کی قیادت میں ہی سینیئر کانگریسیوں نے محترمہ گاندھی کو خط لکھا تھا۔ مسٹر آزاد نے کہا کہ اگر ’بی جے پی سے ساز باز کا الزام ثابت ہوتا ہے تو میں استعفیٰ دے دوں گا‘۔

اسی سلسلے میں سابق مرکزی وزیر کپل سبل نے بھی ٹویٹ کر کے تلخی کا اظہار کیا۔ حالانکہ بعد میں انہوں نے ٹویٹ ڈلیٹ کر دیا تھا۔ مسٹر اویسی نے مسٹر آزاد کے استعفیٰ کی بات پر طنز کرتے ہوئے ٹویٹ کیا،’ شاعرانہ انصاف:غلام نبی صاحب مجھ پر بالکل یہی الزام عائد کرتے تھے۔ اب آپ پر بھی یہی الزام ہے۔ 45 سال کی غلامی صرف اس لیے؟ اب یہ بات ثابت ہوگئی ہے کہ ’جینیاُو دھاری قیادت‘ کی مخالفت کرنے والا بھی بی ٹیم ہی کہلایا جائے گا۔ مجھے امید ہے کہ مسلمان اب کانگریس سے اعلیٰ درجے کی وفاداری کا مطلب سمجھ جائیں گے‘۔

 

Advertisement

Related Articles