کنگنا کا دفتر مسمار کرنا غیر ضروری: شرد پورا

ممبئی،مہاراشٹرا کے اقتدار میں شیو سینا کی ایک اتحادی، راشٹروادی کانگریس پارٹی کے صدر اور ریاست کی سیاست میں ایک اہم کردار نبھانے والے قدآور مراٹھا قائد شرد پوار نے آج شیوسینا کے قبضہ والی ممبئی میونسپل کارپوریشن کی جانت سے فلم اداکارہ کنگنارناؤت کے ممبئی میں واقع آفس میں کی گئ مسماری کو ایک غیر ضروری اقدام قرار دیتے ہویے کہا کہ کنگنا جیسے لوگوں کو زیادہ تشہیر نہیں دی جانی چایئے۔
واضح رہے کہ گزشتہ کئی دنوں سے کنگنا رناؤت اور مہاراشٹرا میں برسراقتدار شیو سینا کے درمیانزبردست لفظی جنگ چھڑیہوئی ہے۔ اور دونوں جانب سے ایک دوسرے کے خلاف الزامات اور طنز کے تیر برسائے جا رہے ہیں۔
والی ممبئی میونسپل کارپوریشن کی جاب سے اپنے دفتر کے ایک حصے کی مسماری کے بعد کنگنا نے ایک بار پھر ایک متنازعہ ٹوئٹ کیا ۔جس میں اس نے لکھ کہ “یہ میرے لئے محض ایک عمارت نہیں، بلکہ یہ رام مندر ہی ہے۔ آج یہاں بابر آیا ہے اور تاریخ خود کو پھر دوہرا رہی ہے۔ رام مندر ایک بار پھر ٹوٹے گا لیکن یاد رکھنا بابر! یہ مندر پھر بنے گا”
اس معاملے میں شرد پوار نے اپنی حلیف پارٹی شیو سینا کے کان کھینچتے ہوئے اسے غیرضروری قرار دیا۔
دریں اثناء میونسپل کارپوریشن نے بالی ووڈ اداکارہ کنگنا رناؤت کے غیر مجاز دفتر کے خلاف 24 گھنٹوں کے اندر کارروائی کے بعد اپوزیشن نے بھی شیوسینا کو نشانہ بناتے ہوئے ، بی جے پی کے رکن اسمبلی نتیش رانے نے ممبئی میں تمام غیر مجاز تعمیرات کے خلاف فوری کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ انھوں نے طنزیہ سوال کیا ہے کہ بی جے پی نے بھی اے نتیش رانے نے پوچھا ہے کہ بی ایم سی کا قانون سب کے لئے یکساں ہے تو کیا شاہ رخ کے مننات بنگلے پر اگلی کارروائی کی جائے گی؟
کنگنا نے میونسپلٹی کی جانب سے کی جانے والی کارروائی کی تصویر ٹویٹ کر کے ،بابر کی فوج ، پاکستان ، پاکستان کے زیر قبضہ کشمیر کا ذکر کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ جمہوریت کا قتل ہے۔ کنگنا کے وکیل رضوان صدیقی نے اس کاروائی کے لیے ہائی کورٹ سے رجوع کیا اور اس پر اسٹے حاصل کیا ، تاہم ، اس قبل ہی کنگنا کا دفتر مسمار کردیا گیا تھا

Related Articles