لاک ڈاؤن سے کورونا انفیکشن کی شرح سست ہوئی : ہرش وردھن

نئی دہلی،مرکزی وزیر صحت و خاندانی بہبود ڈاکٹر ہرش وردھن نے کورونا کے خلاف جنگ میں لاک ڈاؤن کو اہم بتاتے ہوئے آج کہا کہ اس سے نہ صرف کورونا وائرس کوویڈ -19 کے انفیکش پھیلنے کی رفتارسست ہوئی بلکہ اس سے حکومت صحت سے متعلق بنیادی ڈھانچے کو مضبوط کرنے کا بھی مناسب وقت ملا۔
ڈاکٹر ہرش وردھن نے عالمی ادارہ صحت (ڈبلیوایچ او)کی جنوب مشرقی ایشیا کی علاقائی ڈائریکٹر کھیترپال سنگھ کی علاقے کے کرن ملکوں کے وزرائے صحت کے ساتھ ہوئی ورچوئل میٹنگ آج کہا کہ ہندوستان میں لاک ڈاؤن بہت ہی موثر ثابت ہوا۔اس سے انفیکشن کے معاملے بڑھنے کی شرح سست ہوئی اور حکومت نے وقت کا صحیح استعمال کرتے ہوئے کورونا ٹیسٹ کرنے کی صلاحیت بڑھائی اور صحت سے متعلق بنیادی ڈھانچے کو مضبوط کیا۔
انہوں نے بتایا کہ جنوری میں پورے ملک میں صرف ایک تجربہ گاہ میں کورونا انفیکشن کی جانچ کی سہولت تھی لیکن آج ملک میں 1,370 ایسی لیبز ہیں۔ اب ہر ہندوستانی زیادہ سے زیادہ تین گھنٹے کی دوری طے کرکے ان لیبز میں جانچ کرا سکتے ہیں۔ملک کے 36 میں سے 33 ریاست اور مرکز کے زیر انتظام ریاستوں میں ڈبلیو ایچ او کے فی دس لاکھ آبادی میں 140 ٹیسٹ کرانے کے معیار سے زیادہ تعداد میں جانچ ہورہی ہے۔
وزیر صحت نے مسٹر سنگھ کو بتایا کہ ملک میں کنٹینمنٹ کی حکمت عملی بھی کامیاب رہی ہے۔ملک کی صرف تین ریاستوں میں کورونا انفیکشن کے 50 فیصد معاملے ہیں اور 32 فیصد انفیکشن معاملے ساتھ ریاستوں سے ہیں۔اس سے پتہ چلتا ہے کہ وائرس کا پھیلاؤ تھم گیا ہے۔
ڈاکٹر ہرش وردھن نے بتایا کہ کس طرح ہندوستان نے تب سے ہی کورونا کے خلاف جنگ کی تیاری کر دی تھی جب چین نے ڈبلیو ایچ او کو سات جنوری کو کورونا کی وبا کی اطلاع دی۔ ہندوستان کے فوری طورپر قدم اٹھانے اور کثیر سطحی ادارہ جاتی کوششوں سے ملک میں فی دس لاکھ آبادی کورونا انفیکشن اور انفیکشن کی وجہ سے موت کے معاملے کافی کم ہے۔

Related Articles

Check Also

Close