فوج میں ‘اگنی پتھ سے ‘اگنی ویر بھرتی کئے جائیں گے: راجناتھ

نئی دہلی، جون ۔حکومت نے تینوں فوجیوں میں جوانوں کی بھرتی کے عمل میں ایک بڑی تبدیلی کرتے ہوئے اگنی پتھ کی نئی اسکیم کے تحت صرف چار برسوں کے لیے اگنی ویروں کی بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔منگل کو یہاں وزیر اعظم نریندر مودی کی صدارت میں مرکزی کابینہ کی سیکورٹی امور کی کمیٹی میں اس فیصلے کو منظوری دی گئی۔وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے بعد میں تینوں افواج کے سربراہوں کی موجودگی میں ایک پریس کانفرنس میں یہ جانکاری دی۔ انہوں نے کہا کہ اب تینوں فوجوں میں اگنی پتھ اسکیم کے تحت جوانوں یعنی اگنی ویروں کو بھرتی کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس کا مقصد افواج کو فٹ، جوان اور جوش و جذبے سے بھرپور بنانا ہے۔ اس سے ملک کی سلامتی کا نظام مضبوط ہونے کے ساتھ ساتھ نوجوانوں کو ملک کی خدمت کا موقع ملے گا اور ان میں حب الوطنی کا جذبہ بھی پیدا ہوگا۔مسٹر سنگھ نے کہا کہ اس اسکیم سے نوجوانوں کے لیے روزگار کے مواقع بھی بڑھیں گے اور چار سال بعد جب یہ نوجوان فوج سے باہر آئیں گے تو ملک کو مختلف ہنر سے لیس نوجوان کی افرادی قوت بھی ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ ان نوجوانوں کو فوج سے نکلنے کے بعد اچھی تنخواہ اور اچھی سروس فنڈ پیکج دیا جائے گا۔ اگر کسی بھی اگنی ویر کی فوج میں خدمات انجام دیتے ہوئے موت ہو جاتی ہے تو اس کے اہل خانہ کو بیمہ کی صورت میں کافی رقم دی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ یہ اسکیم نوجوانوں کو مدنظر رکھتے ہوئے بیرونی ممالک کی اسکیموں کا مطالعہ کرنے کے بعد تیار کی گئی ہے اور اسے کسی کی نقل نہیں کہا جا سکتا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اسکیم کو شک کی نگاہ سے نہیں دیکھا جانا چاہئے۔ قیاس آرائیاں نہ کرنے کے لیے حکومت نے افواج میں اخراجات اور بچت کو کم کرنے کے لیے یہ اسکیم لائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ملکی سلامتی کے لیے اخراجات کرنے سے پیچھے نہیں ہٹے گی۔ایک سوال کے جواب میں وزیر دفاع نے کہا کہ نئے چیف آف ڈیفنس اسٹاف (سی ڈی ایس) کا تقرر جلد کردیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس کے لیے ضروری اقدامات کیے جا رہے ہیں۔بحریہ کے سربراہ ایڈمرل آر ہری کمار نے اس موقع پر کہاکہ "اگنی پتھ اسکیم نئی سوچ کا ایک نیا دور ہے، ایک آئیڈیا جو ہندوستان میں بنایا گیا ہے اور ہندوستان کے لیے بنایا گیا ہے۔ یہ نوجوانوں کی امنگوں اور مسلح افواج کی مستقبل کی ضروریات کے درمیان توازن قائم کرے گا۔ اگر ہم مستقبل کے بارے میں سوچیں تو ایک ایسی سوچ نظر آتی ہے جو ملک کی نوجوان نسل کو قابل، خوشحال اور بااختیار بنا کر پورے ملک میں تبدیلی لانے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بحریہ میں اگنی ویر کو جدید ترین جنگی جہازوں، آبدوزوں، طیارہ بردار بحری جہازوں اور فوجی طیاروں میں تعینات کیا جائے گا اور ساتھ ہی وہ جدید ترین ہتھیاروں کے نظام کے استعمال میں بھی ماہر ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس اسکیم کے تحت خواتین کو بھی بھرتی کیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ "میں اس بات پر زور دینا چاہوں گا کہ اس نئے نظام کی ہموار منتقلی کے لیے تمام منصوبے تیار کر لیے گئے ہیں۔ دھیان دیں، بحریہ کی اگنی ویر اسکیم میں خواتین کو بھی شامل کیا جائے گا۔ آرمی چیف جنرل منوج پانڈے نے کہا کہ یہ ایک بڑی تبدیلی ہے اور اس سے فوج میں انسانی وسائل کے انتظام میں بڑے پیمانے پر تبدیلی آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ تمام اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ تفصیلی غور و خوض اور بات چیت کے بعد پلان کو حتمی شکل دی گئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ "میں سب کو یقین دلانا چاہتا ہوں کہ بھرتی کے لیے نافذ کم از کم جسمانی اور طبی اصولوں کو یقینی بنانے کے لیے پیرامیٹرز پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔جنرل پانڈے نے کہاکہ ‘میں اس بات پر بھی زور دینا چاہوں گا کہ فوج کو اپنے شاندار ورثے، تاریخ، روایت، عسکری اقدار اور ثقافت پر فخر ہے اور ‘نام، نمک اور نشان’ کے بنیادی اصولوں کو مکمل طور پر برقرار رکھیں گے۔ اگنی ویر مکمل طور پر فوج میں جذب ہو جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے فوج میں نیا ولولہ اور اعتماد پیدا ہوگا اور یہ مضبوط، زیادہ قابل اور مستقبل پر مبنی ہوگی۔فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل وی آر چودھری نے کہا کہ اگنی پتھ اسکیم ملک کے اہل شہریوں کو مسلح افواج میں شمولیت کا بہترین موقع فراہم کرتی ہے۔ فضائیہ اگنی ویروں کو ہنر مند اور تربیت یافتہ بنا کر قوم کو نظم و ضبط اور ہنر مند افرادی قوت فراہم کرے گی۔فضائیہ میں کام کرنے کے بعد اپنی چار سالہ مدت ملازمت مکمل کرنے کے بعد جب وہ سول سوسائٹی میں واپس آئیں گے تو ملازمت کے لیے مختلف شعبوں میں مہارت حاصل کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ وہ ملک کے نوجوانوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ اس اسکیم سے فائدہ اٹھائیں اور ملک کی خدمت کریں۔

Advertisement
Advertisement

Related Articles