ستیندر جین نے خود منی لانڈرنگ کا اعتراف کیا، کیجریوال ان کا دفاع کیسے کریں گے: ایرانی

نئی دہلی، جون۔بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے آج عام آدمی پارٹی (اے اے پی) حکومت کے وزیر صحت ستیندر جین کو عام آدمی پارٹی کے سربراہ اور وزیر اعلی اروند کیجریوال کی طرف سے دہلی میں دی گئی کلین چٹ پر جوابی حملہ کیا اور کہا کہ 56 شیل (فرضی) کمپنیوں کے مالک جین نے خود 16.39 کروڑ روپے کی منی لانڈرنگ کا اعتراف کیا ہے، پھر مسٹر کیجریوال ان کا کس منہ سے دفاع کر رہے ہیں؟دہلی کے وزیر اعلی اور اے اے پی لیڈر اروند کیجریوال نے کل ایک "بدعنوان شخص” کو کلین چٹ دے دی ہے، سینئر بی جے پی لیڈر اور مرکزی خواتین اور بچوں کی فلاح وبہبود کی وزیر اسمرتی ایرانی نے یہاں پارٹی کے مرکزی دفتر میں ایک پریس کانفرنس میں کہاکہ اپنے پریس ایڈریس میں انہوں نے اعلان کیا ہے کہ ستیندر جین کے خلاف الزامات تمام حقائق سے دور ہیں۔ چونکہ مسٹر کیجریوال نے مسٹر ستیندر جین کو عوامی عدالت سے بری کردیا۔ اس لئے آج وہ کچھ سوال کرنے پر مجبور ہوئی ہیں۔محترمہ ایرانی نے پوچھا کہ کیا مسٹر کیجریوال یہ واضح کر سکتے ہیں کہ مسٹر ستیندر جین نے چار شیل کمپنیوں کو اپنے اہل خانہ کے اراکین کے ذریعہ سے 16.39 کروڑ روپےکی 56 شیل کمپنیوں کے ذریعہ حوالہ آپریٹرز کے ساتھ مل کر 2010-16 تک منی لاڈرنگ کی یا نہیں؟ انہوں نے یہ بھی پوچھا کہ کیا یہ سچ ہے کہ پرنسپل کمشنر آف انکم ٹیکس نے کہا ہے کہ ستیندر جین خود 16.39 کروڑ روپے کے کالے دھن کے حقیقی مالک ہیں۔ کیا یہ سچ ہے کہ دہلی ہائی کورٹ کی ڈویژن بنچ نے 2019 کے اپنے ایک حکم میں اس بات کی تصدیق کی ہے کہ ستیندر جین منی لانڈرنگ کے مرتکب ہوئے ہیں، تو مسٹر کیجریوال کس منہ سے اسے پاک صاف قرار دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگر مسٹر کیجریوال کے پاس عدالت کے حکم کی کاپی نہیں ہے تو بی جے پی کارکنان انہیں یہ دستاویزات فراہم کرنے میں خوشی محسوس کریں گے۔مرکزی وزیر نے پوچھا کہ کیا یہ سچ ہے کہ ستیندر جین شیل کمپنیوں کے مالک ہیں؟ ان شیل کمپنیوں کے نام ہیں- انڈو میٹیلک امپوکس پرائیویٹ لمٹیڈ، اکنچن ڈیولپرس پرائیویٹ لمٹیڈ، پریاس انفو سالیوشن پرائیویٹ لمٹیڈ، منگل یاتن پروجیکٹس پرائیویٹ لمٹیڈ۔ مذکورہ بالاان کمپنیوں کو اپنی اہلیہ کے ساتھ شیئر ہولڈنگ کے ذریعے کنٹرول کرتے ہیں۔ انہوں نے سوال کیا کہ کیا یہ سچ ہے کہ اس کالے دھن کے ذریعے ستیندر جین نے دہلی کے کئی علاقوں میں 200 بیگھہ زمین کا مالکانہ حق اپنے فائدہ میں لیا ہے۔محترمہ ایرانی نے پوچھاکہ "کیجریوال جی، کیا یہ سچ ہے کہ مسٹر ستیندر جین آج انسداد بدعنوانی ایکٹ کے تحت چارج شیٹ میں اہم ملزم ہیں؟ کیا یہ درست ہے کہ 16.39 کروڑ روپے کی منی لانڈرنگ کی آمدنی پر ٹیکس عائد کیا جانا چاہئے، یہ تجویز خود ستیندر جین کی کمپنیوں نے دی تھی۔ ستیندر جین نے خود اعتراف کیا کہ 16.39 کروڑ روپے کی منی لانڈرنگ حوالہ کاروبار کے ذریعے کی گئی، کیجریوال جی کیا ایسا شخص آج بھی آپ کی حکومت میں وزیر رہنا چاہئے؟محترمہ ایرانی نے کہا کہ مسٹر کیجریوال اچھی طرح جانتے ہیں کہ مسٹر ستیندر جین کالے دھن کو سفید کرنے کے کاروبار میں ملوث ہیں۔ انہوں نے سال 2016 میں منی لانڈرنگ کی آمدنی کو اپنی خود اعلان کردہ آمدنی اسکیم میں ظاہر کیا تھا۔ ایسے شخص کو وزیر بنانا اور معاملہ کھلنے پر بھی اس کا دفاع کرنا مسٹر کیجریوال کے دوہرے پن کو بے نقاب کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر کیجریوال نے کہا تھا کہ بدعنوانی کرنا غداری کرنے جیسا ہے، اس لئے مسٹر کیجریوال کو اب بتانا چاہئے کہ ان کی کابینہ میں غدار کیوں ہے۔

Advertisement
Advertisement

Related Articles